Nasoot aur Lahoot kia hai ?



ناسوت اور لاھوت کی پہچان کیا ہے؟
مقامِ ناسوت میں نفس کی ہستی قائم رہتی ہے اور
وہ اپنی ہستی میں مست ہوکر بے اِختیار ہوجاتا ہے۔
پس معلوم ہواکہ مستی ناسوت سراسر نفس وہوا ہے۔
اِس کے برعکس لاھوت میں نفس نیست ونابود ہوجاتاہے
جس کی وجہ سے طالب ہر وقت ہوشیار اور اپنے اِختیار میں
رہتا ہے۔
حضرت سخی سلطان باھوؒ محک الفقر ص 103

Nasoot aur Lahoot kia hai

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.