Tuesday , 16 October 2018
Breaking News

nafs ko marna hai to uskay khilaf chalo


nakal hai kay aik din aik bazurg bethay huyay thay aur un kay samnay unhi ki hebat o surat main unhi ka nafs unkay samnay aa betha. wo bazurg farmatay  hain kay maine jab apni hi shakal ko apnay samnay paya to pucha tu kon hai ? us nay kaha main tera nafs hoon. main nay chaha kay us ko mazbooti say pakar ker usay khoob peetoon lakin nafs ithlaya aur kehnay lga .. tu mujhay is tarha nahi mar skta .. mujhay marna hai to meray khilaf chal


نقل ہے کہ ایک دن ایک بزرگ بیٹھے ہوئے تھے کہ اُن کانفس انہی کی ہیت و صورت میں اُن کے سامنے آکر مصلے پر بیٹھ گیا۔ وہ بزرگ فرماتے ہیں کہ جب میں نے اپنی ہی صورت کو اپنے سامنے بیٹھے ہوئے دیکھا تو پوچھا:۔ “تو کون ہے ؟” اُس نے کہا:۔ “میں تیرا نفس ہوں”۔ میں نے چاہا کہ اُسے مضبوطی سے پکڑ کر خوب پیٹوں لیکن نفس اِٹھلایا اور کہنے لگا:۔ ” تُو مجھے اِس طرح نہیں مار سکتا، 
مجھے مارنا ہے تو میرے خلاف چل”
حضرت سلطان باھُو عین الفقر ص 175

nafs ko marna hai to uskay khilaf chalo

Check Also

Dunia Fitna hai nafs dushman hai

جان لے کے تمام علمِ قرآن و علمِ حدیثِ نبوی صلی اللہُ علیہ وآلہ وسلم …